Taleemat e Ameer 74

** تعلیمات امیر (Taleemat e Ameer r.a)
** چوہترواں حصہ (part-74)

  • مرتبہ ومقام اعزاز واکرام –

صاحبِ کتاب “تاریخ فیروز شاہی” لکھتے ہیں۔
خاکسار مؤلف تاریخ فروز شاہی نے معتبر و معمر بزرگوں سے سنا ہے کہ سلطان غیاث الدین بلبن کے عہد حکومت میں جند ہستیاں جو سلطان شمس الدین ایلتمش کے مبارک عہد کی یادگار تھیں، باقی رہ گئی تھیں اور اس دور کے جند ملوک و امرا و اعوان سلطنت بھی موجود تھے۔ یہ بزرگ ہستیاں اور یہ ملوک وامرا سلطان بلبن کے عہد کے لئے باعثِ زینت اور باعثِ فخر تھے۔ چنانچہ سادات میں سے کہ بزرگانے امت کے سرتاج ہیں۔ دارالسلطنت شہر دہلی کے شیخ الاسلام قطب الدین محمد ؒجو بدایوں کے قاضیوں کے جد بزرگوار ہیں باقی رہ گئی تھیں۔

اس کے آگے دوسرے ساداتوں کا زکر کرتے ہوئے مصنف تاریخ فیروز شاہی لکھتے ہیں کہ “دوسرے متعدد سادات کرام جو جنگیز خان ملعون کے حادثہ کے وجہ سے اس ملک میں تشریف لائے تھے ان میں سے ہر ایک صحیح النسبی اور عالی حسبی میں بینظیر اور کمالِ تقوی و تدین سے آراستہ رونق بخش وجود تھا۔

📚 ماخذ از کتاب چراغ خضر۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s