Taleemat e Ameer 66

** تعلیمات امیر (Taleemat e Ameer r.a)
** چھاچھٹواں حصہ (part-66)

  • آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا ایک درویش کو یہ بشارت دینا کہ “ہندوستان میں اسلام کی اشاعت میرے فرزند قطب الدین پر منحصر ہے”

مصنف کتاب صاحب “بحر زخار” لکھتے ہیں کہ حضرت شاہ سید غلام حسن قطبی رحمت اللہ علیہ ۲؂ جانشین حضرت مخدوم شاہ حسام الحق مانکپوری رحمت اللہ علیہ فرماتے ہیں کہ ایک مرتبہ ایک بزرگ کا کڑا میں گزر ہوا۔ انھوں نے دریائے گنگا میں غسل کیا۔ راجہ جے چند کو، جو وہاں کا ظالم اور دشمن اسلام حکمران تھا، یہ بات ناگوار ہوئی اور اس نے ان بزرگ کی ایک انگلی سزا کے طور پر شہید کروا دی۔ یہ بزرگ یہاں سے مدینہ منورہ تشریف لے گئے اور وہاں روضۂ نبوی صلی اللہ علیہ وسلم کے سامنے جا کر فریاد اور شکایت کی۔ روضۂ سرکار دو عالم صلی اللہ علیہ وسلم سے جواب ملا کہ۔
“ہندوستان میں اسلام کی اشاعت میرے فرزند قطب الدینؒ پر منحصر ہے” اللہُ اکبر۔


۱؂ حضرت شیخ نجم الدین کبری فردوسؒی کے مشہور تصنیفات اس طرح ہے ۔ منازل السائرين، فواتح الجمال، منہاج السالكين، ديوان شعر، الخائف الهائم، عن لومۃ اللائم، طوالع التنوير، ہدايۃ الطالبين، رِسَالَۃ الطّرق، سر الحدس، طوالع التَّنْوِير، عين الْحَيَاة فِی تَفْسِير الْقُرْآن۔

۲؂ آپ بہت مرتاز باکمال درویش تھیں جن کے مریدوں کی تعداد بنگال میں بہت تھی اور قوم جِنّات آپ کے تابع تھی۔ ۲/جمادی الآخر ؁ ۱۰۶۷ھ آپ کا وصال ہے۔ تاریخ کڑا مانکپور ص ۲۵۷۔


📚 ماخذ از کتاب چراغ خضر۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s