Fitnoo ka zahoor 26

al-Qur’ān

(4) اِنَّمَا جَزٰٓؤُا الَّذِيْنَ یُحَارِبُوْنَ اللهَ وَرَسُوْلَهٗ وَیَسْعَوْنَ فِی الْاَرْضِ فَسَادًا اَنْ یُّقَتَّلُوْٓا اَوْ یُصَلَّبُوْٓا اَوْ تُقَطَّعَ اَيْدِيْھِمْ وَاَرْجُلُھُمْ مِّنْ خِلَافٍ اَوْ یُنْفَوْا مِنَ الاَرْضِ ط ذٰلِکَ لَھُمْ خِزْیٌ فِی الدُّنْیَا وَلَھُمْ فِی الْاٰخِرَةِ عَذَابٌ عَظِيْمٌo
(المائدۃ، 5/ 33)

بے شک جو لوگ اللہ اور اس کے رسول سے جنگ کرتے ہیں اور زمین میں فساد انگیزی کرتے پھرتے ہیں (یعنی مسلمانوں میں خونریز رہزنی اور ڈاکہ زنی وغیرہ کے مرتکب ہوتے ہیں) ان کی سزا یہی ہے کہ وہ قتل کیے جائیں یا پھانسی دیے جائیں یا ان کے ہاتھ اور ان کے پاؤں مخالف سمتوں سے کاٹے جائیں یا (وطن کی) زمین (میں چلنے پھرنے) سے دور (یعنی ملک بدر یا قید) کر دیے جائیں۔ یہ (تو) ان کے لیے دنیا میں رسوائی ہے اور ان کے لیے آخرت میں (بھی) بڑا عذاب ہےo

(4) Be-shak jo log Allāh aur us ke Rasūl se jaṅg karte haiṅ aur zamīn meṅ fasād aṅgezī karte phirte haiṅ (yaʻnī Musalmānoṅ meṅ ḳhūn-rez răh-zanī aur d̥ākah-zanī waġhairah ke murtakib hote haiṅ) un kī sazā yahī hai keh woh qatl kiye jā’eṅ yā phāṅsī diye jā’eṅ yā un ke hāth aur un ke pā’oṅ muḳhālif samtoṅ meṅ kāt̥e jā’eṅ yā (waṭan kī) zamīn (meṅ chalne phirne) se dūr (yaʻnī mulk badar yā qaid) kar diye jā’eṅ. Yeh (to) un ke liye dunyā meṅ ruswā’ī hai aur un ke liye āḳhirat meṅ (bhī) bar̥ā ʻaz̲āb hai.

[al-Mā’idah, 05/33.]

al-Ḥadīt̲h̲

27۔ عَنْ ثَوْبَانَ رضي الله عنه قَالَ: قَالَ رَسُوْلُ اللهِ ﷺ : إِنَّمَا أَخَافُ عَلٰی أُمَّتِي الْأَئِمَّةَ الْمُضِلِّيْنَ، وَإِذَا وُضِعَ فِي أُمَّتِي السَّيْفُ لَمْ یُرْفَعْ عَنْهُمْ إِلٰی یَوْمِ الْقِیَامَةِ۔

رَوَاهُ أَحْمَدُ وَأَبُوْ دَاوُدَ وَالتِّرْمِذِيُّ وَالدَّارِمِيُّ وَابْنُ حِبَّانَ۔ وَقَالَ التِّرْمِذِيُّ: وَهٰذَا حَدِيْثٌ حَسَنٌ صَحِيْحٌ۔

27: أخرجہ أحمد بن حنبل في المسند، 5/ 278، 284، الرقم/ 22447-22448، 22505، وأبو داود في السنن، کتاب الفتن والملاحم، باب ذکر الفتن ودلائلہا، 4/ 109، الرقم/ 4343، والترمذي في السنن، کتاب القتن، باب ما جاء في الأئمۃ المضلّین، 4/ 504، الرقم/ 2229، والدارمي في السنن، 1/ 80، الرقم/ 209، وأیضًا، 2/ 401، الرقم/ 2752، وابن حبان في الصحیح، 15/ 109-110، الرقم/ 6714۔

وَفِي رِوَایَةٍ أَنَّ النَّبِيَّ ﷺ قَالَ: لَيْسَ أَشَدُّ مَا أَتَخَوَّفُ عَلٰی أُمَّتِي الشَّيْطَانَ وَلاَ الدَّجَّالَ، وَلٰـکِنَّ أَشَدُّ مَا أَتَّقِي عَلَيْهِمُ الأَئِمَّةَ الْمُضِلِّيْنَ۔ (1)

رَوَاهُ أَحْمَدُ وَالْمُقْرِئ وَاللَّفْظُ لَهٗ۔

(1) أخرجہ أحمد بن حنبل في المسند، 5/ 145، الرقم/ 21335، والمقرئ في السنن الواردۃ في الفتن، 1/ 273، الرقم/ 58۔

حضرت ثوبان رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: بیشک مجھے اپنی امت پر گمراہ کرنے والے نام نہاد لیڈروں کا ڈر ہے، جب میری امت میں ایک بار تلوار چل گئی تو قیامت تک نہیں رک سکے گی۔

اس حدیث کو امام اَحمد، ابو داود، ترمذی، دارمی اور ابن حبان نے روایت کیا ہے۔ امام ترمذی نے فرمایا: یہ حدیث حسن صحیح ہے۔

ایک روایت کے الفاظ ہیں: حضور نبی اکرم ﷺ نے فرمایا: مجھے اپنی امت پر شیطان یا دجال (کے غلبہ) کا اتنا خوف نہیں ہے۔ جتنا مجھے گمراہ کرنے والے (نام نہاد) لیڈروں کا خدشہ ہے۔

اس حدیث کو امام اَحمد اور مقرئ نے مذکورہ الفاظ میں نے روایت کیا ہے۔

  • Ḥaz̤rat T̲h̲awbān raḍiya Allāhu ‘anhu se marwī hai keh Rasūl Allāh ṣallá Allāhu ‘alayhi wa-Ālihī wa-sallam ne farmāyā: Be-shak mujhe apnī ummat par gumrāh karne wāle nām nihād līd̥aroṅ kā d̥ar hai, jab merī ummat meṅ ek bār talwār chal ga’ī to qiyāmat tak nahīṅ ruk sakegī. Is ḥadīs̲ ko Imām Aḥmad, Abū Dāwūd, Tirmid̲h̲ī, Dārimī aur Ibn Ḥibbān ne riwāyat kiyā hai. Imām Tirmid̲h̲ī ne farmāyā: yeh ḥadīs̲ ḥasan ṣaḥīḥ hai. Ek riwāyat keh alfāẓ haiṅ: Ḥuz̤ūr Nabīye Akram ṣallá Allāhu ‘alayhi wa-Ālihī wa-sallam ne farmāyā: mujhe apnī ummat par shayṭān yā dajjāl (ke ġhalabah) kā itnā ḳhauf nahīṅ hai. Jitnā mujhe gumrāh karne wāle (nām nihād līd̥aroṅ kā ḳhadshah hai. Is ḥadīs̲ ko Imām Aḥmad aur Muqrī ne maz̲kūrah alfāẓ meṅ riwāyat kiyā hai.

    [Ṭāhir al-Qādrī fī al-Qawlu al-Ḥasani fī ʻalāmatī al-sāʻaṫi wa-ẓuhūri al-fitan,/65_67, raqam: 27.]

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s