Fitnoṅ kā ẓuhūr 12

al-Qur’ān

(13) اِنَّمَا السَّبِيْلُ عَلَی الَّذِيْنَ یَظْلِمُوْنَ النَّاسَ وَیَبْغُوْنَ فِی الْاَرْضِ بِغَيْرِ الْحَقِّ ط اُوْلٰٓـئِکَ لَهُمْ عَذَابٌ اَلِيْمٌo وَلَمَنْ صَبَرَ وَغَفَرَ اِنَّ ذٰلِکَ لَمِنْ عَزْمِ الْاُمُورِo وَمَنْ یُّضْلِلِ اللهُ فَمَا لَهٗ مِنْ وَّلِیٍّ مِّنْم بَعْدِهٖ ط وَتَرَی الظّٰلِمِيْنَ لَمَّا رَاَوُا الْعَذَابَ یَقُوْلُوْنَ هَلْ اِلٰی مَرَدٍّ مِّنْ سَبِيْلٍo
(الشوریٰ، 42/ 42-44)
بس (ملامت و گرفت کی) راہ صرف اُن کے خلاف ہے جو لوگوں پر ظلم کرتے ہیں اور زمین میں ناحق سرکشی و فساد پھیلاتے ہیں، ایسے ہی لوگوں کے لیے دردناک عذاب ہےo اور یقینا جو شخص صبر کرے اور معاف کر دے تو بے شک یہ بلند ہمت کاموں میں سے ہےo اور جسے اللہ گمراہ ٹھہرا دے تو اُس کے لیے اُس کے بعد کوئی کارساز نہیں ہوتا، اور آپ ظالموں کو دیکھیں گے کہ جب وہ عذابِ (آخرت) دیکھ لیں گے (تو) کہیں گے: کیا (دنیا میں) پلٹ جانے کی کوئی سبیل ہے؟o

(13) Bas (malāmat-o giraft kī) rāh ṣirf un ke ḳhilāf hai jo logoṅ par ẓulm karte haiṅ aur zamīṅ par nā-ḥaqq sarkashī wa fasād phailāte haiṅ, aise hī logoṅ ke liye dard-nāk ʻaz̲āb hai. Aur yaqīnan jo shaḳhṣ ṣabr kare aur muʻāf kar de to Be-shak yeh balaṅd himmat kāmoṅ meṅ se hai. Aur jise Allāh gumrāh t̥hăhrā de to us ke liye us ke baʻd ko’ī kārsaz nahīṅ hotā, aur Āp ẓālimoṅ ko deḳheṅge keh jab woh ʻaz̲ābe (āḳhirat) dekh leṅge (to) kaheṅge: kyā (dunyā meṅ) palat̥ jāne kī ko’ī sabīl hai?

[al-Shūrá, 42/42_44.]

al-Ḥadīt̲h̲

13۔ عَنْ ثَوْبَانَ رضي الله عنه قَالَ: قَالَ رَسُوْلُ اللهِ ﷺ : یُوْشِکُ الْأُمَمُ أَنْ تَدَاعٰی عَلَيْکُمْ کَمَا تَدَاعَی الْأَکَلَةُ إِلٰی قَصْعَتِهَا فَقَالَ قَائِلٌ: وَمِنْ قِلَّةٍ نَحْنُ یَوْمَئِذٍ؟ قَالَ: بَلْ أَنْتُمْ یَوْمَئِذٍ کَثِيْرٌ وَلٰـکِنَّکُمْ غُثَاءٌ کَغُثَاءِ السَّيْلِ وَلَیَنْزَعَنَّ اللهُ مِنْ صُدُوْرِ عَدُوِّکُمُ الْمَهَابَةَ مِنْکُمْ وَلَیَقْذِفَنَّ اللهُ فِي قُلُوْبِکُمُ الْوَهْنَ، فَقَالَ قَائِلٌ: یَا رَسُوْلَ اللهِ، وَمَا الْوَهْنُ؟ قَالَ: حُبُّ الدُّنْیَا وَکَرَاهِیَةُ الْمَوْتِ۔
رَوَاهُ أَحْمَدُ وَأَبُوْ دَاوُدَ وَاللَّفْظُ لَهٗ وَابْنُ أَبِي شَيْبَةَ۔

13: أخرجہ أحمد بن حنبل في المسند، 5/ 278، الرقم/ 22450، وأبوداود في السنن، کتاب الملاحم، باب في تداعي الأمم علی الإسلام، 4/ 111، الرقم/ 4297، وابن أبي شیبۃ في المصنف، 7/ 463، الرقم/ 37247، والطیالسي في المسند، 1/ 133، الرقم/ 992۔

حضرت ثوبان رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: وہ وقت قریب ہے کہ جب دیگر اقوام تمہیں مٹانے کے لیے (مل کر سازشیں کریں گی اور) ایک دوسرے کو اس طرح بلائیں گی جیسے دسترخوان پر کھانا کھانے والے (لذیذ) کھانے کی طرف ایک دوسرے کو بلاتے ہیں۔ کسی نے عرض کیا: یا رسول اللہ! کیا ہماری قلتِ تعداد کی وجہ سے ہمارا یہ حال ہو گا؟ آپ ﷺ نے فرمایا: نہیں بلکہ تم اس وقت تعداد میں بہت ہو گے البتہ تم سیلاب کی جھاگ کی طرح ناکارہ ہو گے، اللہ تعالیٰ تمہارے دشمنوں کے دل سے تمہارا رعب اور دبدبہ نکال دے گا اور تمہارے دلوں میں بزدلی ڈال دے گا۔ کسی نے عرض کیا: یا رسول اللہ! بزدلی سے کیا مراد ہے؟ آپ ﷺ نے فرمایا: دنیا سے محبت اور موت سے نفرت۔

اِس حدیث کو امام احمد، ابو داود نے مذکورہ الفاظ میں اور ابن ابی شیبہ نے روایت کیا ہے۔

  • Ḥaz̤rat T̲h̲awbān raḍiya Allāhu ‘anhu se marwī hai keh Rasūl Allāh ṣallá Allāhu ‘alayhi wa-Ālihī wa-sallam ne farmāyā: woh waqt qarīb hai keh jab dīgar aqwām tumheṅ mit̥āne ke liye (mil kar sāzisheṅ kareṅgī aur) ek dūsre ko is ṭarḥ bulā’eṅgī jaise dastaḳhẉān par khānā khāne wāle (laz̲iz̲) khāne kī ṭaraf ek dūsre ko bulāte haiṅ. Kisī ne ʻarz̤ kiyā:· yā Rasūl Allāh! Kyā hamārī qillate taʻdād kī waj·h se hamārā yeh ḥāl hogā? Āp ṣallá Allāhu ‘alayhi wa-Ālihī wa-sallam ne farmāyā: nahīṅ bal-keh tum us waqt taʻdād meṅ bŏhat hoge al-battah sailāb kī jhāg kī ṭarḥ nākārah hoge, Allāh Taʻālá tumhāre dushmanoṅ ke dil se tumhārā rŏʻb aur dabdabah nikāl degā aur tumhāre diloṅ meṅ buzdilī d̥āl degā. Kisī ne ʻarz̤ kiyā: yā Rasūl Allāh! Buzdilī se kyā murād hai? Āp ṣallá Allāhu ‘alayhi wa-Ālihī wa-sallam ne farmāyā: dunyā se maḥabbat aur maut se nafrat. Is ḥadīs̲ ko Imām Aḥmad, Abū Dāwūd ne maz̲kūrah alfāẓ meṅ aur Ibn Abī Shaybah ne riwāyat kiyā hai.

    [Ṭāhir al-Qādrī fī al-Qawlu al-Ḥasani fī ʻalāmatī al-sāʻaṫi wa-ẓuhūri al-fitan,/32_33, raqam: 13.]
    〰〰
    Join Karen

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s