Fitnoṅ kā ẓuhūr part 11

al-Qur’ān

(12) اَلَّذِيْنَ هُمْ فِيْ غَمْرَةٍ سَاهُوْنَo یَسْئَلُوْنَ اَيَّانَ یَوْمُ الدِّيْنِo یَوْمَ هُمْ عَلَی النَّارِ یُفْتَنُوْنَo

(الذاریات، 51/ 11-13)

جو جہالت و غفلت میں (آخرت کو) بھول جانے والے ہیںo پوچھتے ہیں یومِ جزا کب ہوگا؟o (فرما دیجیے:) اُس دن (ہوگا جب) وہ آتشِ دوزخ میں تپائے جائیں گےo

(12) Jo jahālat-o ġhaflat meṅ (āḳhirat ko) bhūl jāne wāle haiṅ. Pūc̥hte haiṅ Yaume Jaza kab hogā? (Farmā dījiye:) us din (hogā jab) woh ātishe dozaḳh meṅ tapā’e jā’eṅge.

[al-D̲h̲āriyāt, 51/11_13.]
〰〰
Join Karen

al-Ḥadīt̲h̲

12۔ عَنْ مُعَاذٍ رضي الله عنه : أَنَّ النَّبِيَّ ﷺ قَالَ: یَکُوْنُ فِي آخِرِ الزَّمَانِ أَقْوَامٌ إِخْوَانُ الْعَـلَانِیَةِ أَعْدَاءُ السَّرِيْرَةِ فَقِيْلَ: یَا رَسُوْلَ اللهِ، فَکَيْفَ یَکُوْنُ ذٰلِکَ؟ قَالَ: ذٰلِکَ بِرَغْبَةِ بَعْضِهِمْ إِلٰی بَعْضٍ وَرَهْبَةِ بَعْضِهِمْ إِلٰی بَعْضٍ۔

رَوَاهُ أَحْمَدُ وَالطَّبَرَانِيُّ وَأَبُوْ نُعَيْمٍ۔

12: أخرجہ أحمد بن حنبل في المسند، 5/ 235، الرقم/ 22108، والطبراني في مسند الشامیین، 2/ 341، الرقم/ 1456، وأبونعیم في حلیۃ الأولیائ، 6/ 102، وذکرہ الدیلمي في مسند الفردوس، 5/ 452، الرقم/ 8713۔

حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور نبی اکرم ﷺ نے فرمایا: آخری زمانہ میں ایسے طبقات اور گروہ ہوں گے جو ظاہری طور پر (ایک دوسرے کے لیے) خیر سگالی کا مظاہرہ کریں گے اور اندر سے ایک دوسرے کے دشمن ہوں گے۔ عرض کیا گیا: یا رسول اللہ! ایسا کیونکر ہوگا؟ آپ ﷺ نے فرمایا: ایک دوسرے سے (شدید نفرت رکھنے کے باوجود صرف) خوف اور لالچ کی وجہ سے (بظاہر دوستی وخیر خواہی کا مظاہرہ کریں گے)۔

اس حدیث کو امام اَحمد، طبرانی اور ابو نعیم نے روایت کیا ہے۔

  • Ḥaz̤rat Muʻād̲h̲ bin Jabal raḍiya Allāhu ‘anhu se riwāyat hai keh Ḥuz̤ūr Nabīye Akram ṣallá Allāhu ‘alayhi wa-Ālihi wa-sallam ne farmāyā: āḳhirī zamānah meṅ aise ṭabaqāt aur guroh hoṅge jo ẓāhirī ṭaur par (ek dūsre ke liye) ḳhair sigālī kā muẓāharah kareṅge aur andar se ek dūsre ke dushman hoṅge. ʻArz̤ kiyā gayā: ya Rasūl Allāh! Aisā kyūṅ-kar hogā? Āp ṣallá Allāhu ‘alayhi wa-Ālihi wa-sallam ne farmāyā: ek dūsre se (shadīd nafrat rakhne ke bā-wujūd ṣirf) ḳhauf aur lālach kī waj·h se (ba-ẓāhir dostī wa ḳhair ḳhẉāhī kā muẓāhrah kareṅge).
    Is ḥadīs̲ ko Imām Aḥmad, Ṭabarānī aur Nuʻaym ne riwāyat kiyā hai.

    [Ṭāhir al-Qādrī fī al-Qawlu al-Ḥasani fī ʻalāmatī al-sāʻaṫi wa-ẓuhūri al-fitan,/31_32, raqam: 12.]

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s