Fitnoṅ kā ẓuhūr part 8

al-Qur’ān

(10) وَیَقُوْلُوْنَ مَتٰی هٰذَا الْفَتْحُ اِنْ کُنْتُمْ صٰدِقِيْنَo قُلْ یَوْمَ الْفَتْحِ لَایَنْفَعُ الَّذِيْنَ کَفَرُوْا اِيْمَانُهُمْ وَلَاهُمْ یُنْظَرُوْنَo فَاَعْرِضْ عَنْهُمْ وَانْتَظِرْ اِنَّهُمْ مُّنْتَظِرُوْنَo

(السجدۃ، 32/ 28-30)

اور کہتے ہیں یہ فیصلہ (کا دن) کب ہوگا اگر تم سچے ہوo آپ فرما دیں: فیصلہ کے دن نہ کافروں کو ان کا ایمان فائدہ دے گا اور نہ ہی انہیں مہلت دی جائے گیo پس آپ اُن سے منہ پھیر لیجیے اور انتظار کیجیے اور وہ لوگ (بھی) انتظار کر رہے ہیںo

(10) Aur kăhte haiṅ yeh faiṣlah (kā din) kab hogā agar tum sachche ho. Āp farmā deṅ: faiṣlah ke din nah kāfiroṅ ko un kā īmān fā’edah degā aur nah hī unheṅ mŏhlat dī jā’egī. Pas Āp unse muṅh pher lījiye aur inteẓār kījiye aur woh log (bhī) inteẓār kar rahe haiṅ.

[al-Sajdah, 32/28_30.]

al-Ḥadīt̲h̲

10۔ عَنْ عَبْدِ اللهِ رضي الله عنه قَالَ: لَا یَأْتِي عَلَيْکُمْ عَامٌ إِلاَّ وَهُوَ شَرٌّ مِنَ الَّذِي کَانَ قَبْلَهٗ، أَمَا إِنِّي لَسْتُ أَعْنِي عَاماً أَخْصَبَ مِنْ عَامٍ وَلَا أَمِيْرًا خَيْرًا مِنْ أَمِيْرٍ، وَلٰـکِنْ عُلَمَاؤُکُمْ وَخِیَارُکُمْ وَفُقَهَاؤُکُمْ یَذْهَبُوْنَ، ثُمَّ لَا تَجِدُوْنَ مِنْهُمْ خَلَفًا وَیَجِيئُ قَوْمٌ یَقِيْسُوْنَ الأُمُوْرَ بِرَأْیِهِمْ۔

رَوَاهُ الدَّارِمِيُّ۔

10: أخرجہ الدارمي في السنن، المقدمۃ، باب تغیر الزمان وما یحدث فیہ، 1/ 76، الرقم/ 188۔

حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ نے فرمایا: تم پر ہر آئندہ سال پہلے سے برا آئے گا میری مراد یہ نہیں کہ پہلا سال دوسرے سال سے غلہ کی فراوانی میں اچھا ہوگا یا ایک امیر دوسرے امیر سے بہتر ہو گا، بلکہ میری مراد یہ ہے کہ تمہارے علماء صالحین اور فقیہ ایک ایک کرکے اُٹھتے جائیں گے اور تم اُن کا بدل نہیں پاؤ گے اور (قحط الرجال کے اس زمانہ میں) بعض ایسے لوگ پیدا ہوں گے جو دینی مسائل کو محض اپنی ذاتی قیاس آرائی سے حل کریں گے۔

اسے امام دارمی نے روایت کیا ہے۔

  • Ḥaz̤rat ʻAbd Allāh bin Masʻūd raḍiya Allāhu ‘anhu ne farmāyā: tum par har ā’indah sāl păhle se burā ā’egā merī murād yeh nahīṅ keh păhlā sāl dūsre sāl se ġhallah kī farāwānī meṅ achc̥hā hogā yā ek amīr dūsre amīr se behtar hogā, bal-keh merī murād yeh hai keh tumhāre ʻulamā’e sāleḥīn aur faqīh ek-ek kar ke ut̥hte jā’eṅge aur tum un kā badal nahīṅ pā’oge aur (Qaḥṭu al-Rijāl ke us zamānah meṅ) baʻz̤ aise log paidā hoṅge jo dīnī masā’il ko măḥz̤ apnī z̲ātī qiyās ārā’ī se ḥal kareṅge. Ise Imām Dārimī ne riwāyat kiyā hai.

    [Ṭāhir al-Qādrī fī al-Qawlu al-Ḥasani fī ʻalāmatī al-sāʻaṫi wa-ẓuhūri al-fitan,/28_29, raqam: 10.]
    〰〰

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s