منقت در مدحِ حضرت حیدرِ کرّار علیه السلام

منقت در مدحِ حضرت حیدرِ کرّار علیه السلام

کہاں ہمسے ممكن ہے مدحت علی کی.
خدا جانتا ہے بس حقیقت علی کی.

کرم ہو کہ شفقت سب عادت وہی ہے,
ہے سیرتِ محمّد کی , سیرت علی کی.

اپنے بستر پے انكو سُلایہ نبي نے,
ہے ثابت یہاں سے نیابت علی کی.

على گر نہ ہوتے عمر بهى نہ هوتے،
بتاتے عمر ہيں يہ عظمت على كى.

ہر اِک بندہ پرور کے آقا علی ہیں,
ہے سب پر اُجاگر یہ شہرت علی کی.

فصاحت, بلاغت قدبوس ہیں سب,
ایسی اعلیٰ ہے شانِ خطابت علی كى.

ولی ھو قطُب ھو کہ يا ھو قلندر ,
ہے سب پہ مقدّم ولایت علی کی.

حُسنِ یوسف کے اَفسُوں آیں زليجا,
حسنِ یوسف میں پنہا تھی صورت علی کی.

لحن میں داؤد کے گویا تھا آہنگ علی کا،
سلیماں میں پنہا تھی ہیبت علی کی.

محبت كو انكى ہے ايماں بتایا,
سو واجب ہے ہم پر اُلفت علی کی.

يہ “وارث علی” كا ہے”فيضان” ديكهو،
كہ تجهكو ملي ہے حمايت علي كى.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s